[horizontal_news id="2" category="پاکستان" scroll_speed="0.05"]

اس مسجد کی تعمیر مکمل ہوتے ہی تم انتقال کر جائوگے، پاکستان کی انتہائی خوبصورت مسجد جس کی تعمیر میں 50سال کا عرصہ لگ گیا

ویسے تو پاکستان میں کئی تاریخی مساجد اور عبادت گاہیں موجود ہیں، اور جو اپنی تاریخ یا حسنِ تعمیر کی وجہ سے جانی جاتی ہیں لیکن شاید بہت

کم لوگوں نے اس مسجد کا ذکر سن رکھا ہے اور جسے بنانے میں 50 برس لگے۔یہ مسجد رحیم یار خان کی تحصیل صادق آباد کی مرکزی شاہراہ پر واقع ہے اور لیکن آج کل یہاں سے گزرنے والے مسافر عام طور پر نزدیک بنی نئی موٹروے پر فراٹے بھرتے یہاں سے گزر بھی جاتے ہیں۔تاہم پرانے وقتوں میں پنجاب اور سندھ کی سرحد کے قریب واقع اس مسجد کو دیکھنے لوگ بہت ہی دور دور سے آتے اور یہاں سے گزرنے والے مسافر

بھی اس مسجد کی زیارت کو لازمی سمجھتے تھے اور یہ ذکر ہے بھونگ مسجد کا، جس کے ڈیزائن، طرزِ تعمیر اور خوبصورت خطاطی کی وجہ سے سنہ 1986 میں اسے آغا خان ایوارڈ برائے اسلامی فنِ تعمیر بھی دیا گیا او ر ۔لیکن اس مسجد کی تاریخ کیا ہے اور اسے مکمل کرنے میں اتنی دیر کیوں لگی؟ایک روایت کے مطابق اس مسجد کی تعمیر میں اتنا عرصہ اس لیے لگا کہ علاقے میں یہ بات بہت ہی زیادہ مشہور تھی.اسے بنوانے

والے رئیس نے اس مسجد کو اپنی زندگی کے دوران جان بوجھ کر مکمل نہیں کروایا۔ تو ایسا کیوں تھا؟ جاننے کے لیے پڑھتے رہیے۔رئیس غازی محمد کا تعلق انڈرھ قوم سے تھا جو راجپوتوں کی ایک شاخ تھی اور جسیلمیر اور بیکانیر (دور حاضر کا راجستھان) کے علاقے پر حکمران رہی اور ان کے مورث اعلیٰ محمد جیا مرحوم بھونگ میں اقامت گزین ہو گئے تھے۔جنھیں مشہور سہروردی بزرگ حضرت شیخ بہاؤالدین ذکریا ملتانی کے خلیفہ مجاز حضرت پیر موسیٰ نواب سے شرف بیعت بھی حاصل تھا اور ان کے خاندان کی دوسری شاخ سکھر میں قیام پذیر ہوئی اور جس کے سربراہ شیخ احمد تھے۔ یہ بھی حضرت پیر موسیٰ نواب کے مرید تھے۔انھوں نے عملاً فقیری اختیار کر لی تھی چنانچہ شکارپور، پنوں عاقل اور گھوٹکی میں ان کی درویشی کا سلسلہ اب بھی قائم ہے۔ قیام پاکستان کے وقت اس خاندان کے سربراہ رئیس غازی محمد تھے۔دولت و ثروت اور جاہ و حشمت کے باوجود وہ سادہ زندگی گزارنے کے قائل بھی تھے۔ اور بے شمار زرعی اراضی ان کی ملکیت تھی، وہ فرسٹ کلاس آنریری مجسٹریٹ بھی رہے۔ وہ بہاولپور دربار میں کرسی نشین رہے اور بہاولپور کی پہلی اسمبلی کے قیام سے ہی سیاست کے میدان میں موجود رہے اور لیکن ان تمام اعزازات کے باوجود جو امتیازی وصف ان کی شخصیت کو نمایاں بھی کرتا تھا وہ تھا ان کا مذہبی جذبہ، اور وہ اللہ اور پیغمبرِ اسلام کی خوشنودی کو ہر حال میں مقدم سمجھتے تھے۔ انھیں دینی کاموں میں بے حد دلچسپی تھی اور روایات کے مطابق یتیموں، بیواؤں اور غریبوں کی امداد و سرپرستی کا کوئی موقع ہاتھ سے نہیں جانے دیتے تھے اور بھونگ مسجد جس مقام پر تعمیر ہوئی وہاں پہلے بھی ایک مسجد بھی موجود تھی۔ رئیس غازی محمد نے اس مسجد کے سامنے ایک محل تعمیر کروایا تھااور جہاں رئیس صاحب کے دوست خصوصاً امیر بہاولپور نواب صادق محمد خان قیام کر سکیں، شکار کریں اور دریا کے کنارے سیر کا لطف اٹھائیں۔ایک دن جب رئیس غازی محمد اسی مسجد میں نماز ادا کر رہے تھے تو انھیں احساس ہوا اور محل کی شان و شوکت مسجد سے بڑھ گئی ہے۔ اور انھوں نے اسی وقت استغفار کیا اور مسجد کے مقام پر تقریباً دگنے رقبے پر ایک نئی مسجد تعمیر کرنے کا اہم فیصلہ کیا۔ یہ سنہ 1932 کے لگ بھگ کی بات ہے۔اور 20 فٹ بلند ایک چبوترہ بنا کر اس پر نئے سرے سے مسجد کی عمارت تعمیر کی گئی۔ اور اس سے مسجد کی پائیداری کے ساتھ خوبصورتی اور جلال و عظمت میں بھی اضافہ ہو گیا۔سنہ 1975 میں رئیس غازی محمد کی وفات کے بعد اس مسجد کی تعمیر کا فریضہ ان کے بڑے بیٹے رئیس شبیر محمد نے سنبھال لیا، جو خود بھی درویش صفت انسان تھے اور صوبائی اور قومی اسمبلی کے رکن بھی رہے تھے۔ اور ان کا انتقال 2 اپریل 2021 کو کراچی میں ہوا۔ رئیس شبیر محمد کے انتقال کے بعد ہی اب اس مسجد کا انتظام ان کے صاحبزادے اور سابق وفاقی وزیر سردار رئیس منیر احمد کے ہاتھ میں ہے اور سنہ 1982 میں مسجد کی تعمیر مکمل ہوئی تو اسے شہرت ملنا شروع ہوئی۔ دنیا بھر سے سیاح اس مسجد کو دیکھنے کے لیے بھی آنے لگے۔ 22 دسمبر1986 کو اس مسجد کو اسلامی فن تعمیر کے فروغ کے لیے قائم کیے گئے آغا خان ایوارڈز فار اسلامک آرکیٹکچر سے نوازا گیا۔ اس ایوارڈ کو وصول کرنے کے لیے رئیس شبیر محمد بذات خود مراکش گئے اور پرنس کریم آغا خان کے ہاتھوں ایوارڈ وصول کیا۔ اور اس ایوارڈ کے ساتھ جو سند عطا ہوئی اس میں سردار رئیس غازی محمد خان کی خدمات کے اعت…



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


تازہ ترین خبریں
نیا وزیراعلیٰ بلوچستان کون ہوگا؟ اہم ترین نام پر اتفاق کر لیا گیا
وزیراعلیٰ بلوچستان کے بعد ایک اور بڑا استعفیٰ ۔۔ وزیراعظم کے قریبی ساتھ اور اہم رہنما نے عہدہ چھوڑ دیا۔۔ بڑی خبر
نااہلی یا پھر ۔۔۔؟ سپریم کورٹ  کے حکم پر وزیراعلیٰ سندھ پیش۔۔ مراد علی شاہ کے حوالے سے بڑی خبر
وہ پاکستانی جنہیں آج بڑی خوشخبری ملے گی اور کن پاکستانیوں کو آج بری خبر ملنے والی ہے ؟ ستاروں کی چال آج کیا کہتی ہے جان لیں ؟ 
قومی ٹیم کی جیت۔۔وزیراعظم نے اہم پیغام جاری کردیا
پاکستانیوں کیلئے زبردست خوشخبری، آج پاکستان اور روس کے مابین کیا کام ہونے جا رہا ہے؟ بڑی خبر

خصوصی فیچرز
توبہ، استغفراللہ،وہ عورتیں جن کی نماز ہرگزقبول نہیں ہوتی،سبق آموز تحریر
انتہائی آسان وظیفہ جس کے پڑھنے سے انشااللہ رزق کی تنگی ختم اور کاروبار اتنا پھیلے گا کہ سنبھالنے سے نہیں سنبھلے گا
بیشک میرا اللہ سب کا بادشاہ ، جرمنی جیسے غیر مسلم ملک نے گھٹنے ٹیک دیے ، اسلام کےحوالے سے حکومتی سطح پر بڑا اعلان کر دیا گیا
میرا رب کبھی مجھے تنہا نہیں چھوڑے گا، ڈاکٹر عبدالقدیر خان کا جنگ اخبار میں آخری کالم،پڑھ کر آپ کی آنکھیں نم ہوجائیں گے
ان کی تو 9 بیویاں ہیں اور پھر بھی ۔۔ عرب ممالک میں مرد زیادہ شادیاں کیوں کرتے ہیں؟ جانیں کچھ دلچسپ معلومات
نئے پلان پر عملدرآمد شروع ۔۔۔2007کی طرح نوازشریف کی واپسی کی راہ ہموار۔۔۔آئندہ کچھ دنوں میں کیا ہونےوالاہے؟ ایسا دعویٰ کہ جس سے ن لیگی خوش ہو جائیں گے

Copyright © 2020 Pakistan News Network. All Rights Reserved