ایک ایسی ہواجس کواللہ تعالیٰ نے 70ہزارزنجیروں سےباندھ رکھاہے ،اس ہواکوکب چھوڑاجائیگااوراس سے کتنی تباہی ہوگی ،جانیں ایسی معلومات جن سے آپ شایدواقف نہ ہوں

وہب ابنِ منبہ نے روایت کی ہے کہ ساتویں زمین پر ایک ہوا ہے اور اسکا نام ریح العقیم ہے اور ستر ہزار زنجیروں سے اسکو باندھ رکھا ہے اور

ستر ہزار فرشتے اس پر محافظ اور مئوکل ہیں جب قیامت کا دن ہو گا وہ ہوا چھوڑ دی جائے گی اور وہ ہوا اتنی تیز ہو گی کہ پہاڑوں کو مانند

ریزہ ابریشم کے اڑا دیگی اور آسمان گر پڑیگااور اسکے ٹکڑے ہو جائیں گے اور وہ مانند روئی کے گالوں کے اڑتا پھرے گا جیسا کہ اللہ تعالٰی نے فرمایا: ” فاذانفخ فی الصور نفحۃ واجداۃ و حملت الارض والجبال فدکنا دکۃ واحدۃ فیومئذ و قعت الواقعۃ وانشقت السمآء فھی یومئذ واھیۃ” ترجمہ: پھر جب پھونکیں گے نرسنگھے میں ایک پھونک اور اٹھاوی جاوے گی زمین اور پہاڑ ٹیکے جاویں ایک چوٹ اس دن ہو پڑےگی ہو پڑنے والی اور پھٹ جاویگا آسمان پھر اس دن وہ سست ہو گا۔حکم ہوا اے فرشتو! وہ ہوا قوم عاد پر کچھ دیر کے لئے چھوڑ دو۔ تب انہوں نے عرض کی اے جبار عالم کس قدر چھوڑیں، حکم ہوا گاۓ کی ناک کے نتھنے کے اندر سے چھوڑ دو، انہون نے عرض کی یا اللہ اس مقدار سے تو سارا عالم ہی برباد ہو جاۓ گا تب حکم ہوا کہ سوئی کے ناکے کے سوراخ کے برابر چھوڑ دو، حکمِ خدا کی تعمیل ہوئی تو وہ ہوا مانند ابر سیاہ کے پہاڑ کیطرف نکل کر آئی اس ہوا کو دیکھ کر قوم عاد خوش ہوئی اور کہنے لگی ” قولہ تعالٰی قالا ھذا عارض ممطرنا” ترجمہ: بولے یہ ابر ہے ہم پر ضرور برسے گا۔ حضرت ہود علیہ السلام نے کہا”قولہ تعالٰی بل ھو مااستعجلتم بہ ریح فیھا عذاب الیم” ترجمہ: کوئی نہیں وہ یہی ہے جسکی تم لوگ شتابی کرتے تھے

اور یہ وہ ہوا ہے جسمیں دکھ کی مار ہے اور جب نکلی تو کافروں نے کہا اے ہود تو نے جو خوشخبری پہنچائی کہ جس سے ہم خنک تر ہونگے۔ حضرت ہود علیہ السلام نے فرمایا ،اے کافرو! ذرا صبر کرو اللہ تعالیٰ کیطرف سے تم پر عذابِ الیم پہنچتا ہے وہ اس خبر کو سن کر تقریبا” سات لاکھ مرد تین پہاڑوں کے درمیان میں جا رہے جہاں ہوا کی راہ ایک طرف سے بھی نہ تھی اور یہ سب ایک دوسرے کا ہاتھ پکڑ کر اور اپنے پاؤں کو گھٹنوں تک زمین میں گاڑ کر بیٹھے تھے اور زن و مرد لڑکے بالے چارپایوں کو بیچ میں اپنے لے لیا اور کہتے تھے تین طرف تو ہمارے پہاڑ ہے اور ایک جانب ہم سب ہیں دیکھتےہیں کونسی ہوا ہے جو ہم سب کے بیچ سے گزرتی ہےاور وہ ہم پر کسطرح زور کر سکتی ہے۔متکبروں نے اپنی قوت کا غرور کیا اور اچانک ایک آواز رعد کی آئی اور ہوا نے اسقدر زور کیا کہ پہلے مکانات اور قصر وغیرہ جتنے تھے سب کو جڑ سے کھود کر پھینک دیااور تمام تعمیرات برباد ہو گئیں اور انکی عبرت کے واسطے انکے پاؤں کے نیچے اور انکے سامنے سرنگوں کر کے زمین پر ڈال دیا، مثال اسکی جیسا کہ اللہ تعالٰی فرماتا ہے: “فتری القوم فیھاصرعیٰ کانھم اعجاز نخل خاویۃ فھل تری لھم من باقیۃ” ترجمہ: یعنی پھر تو دیکھے لوگ ان میں سے بچھڑ گئے جیسے وہ جھنڈ ہیں کھجور کے کھوکھلے پھر کیا دیکھا کہ ان میں کوئی بچ رہا اور پتھر دھول و خاک میں ایک برس تک پڑے روتے رہے اور جو شخص بھی ان کے رونے کی آواز سنتا تو وہ بھی ہلاک ہو جاتا کیونکہ ان کے رونے کی آواز نہایت ہی بھیانک اور خراب تھی۔حضرت ہود علیہ السلام نے زمین پر ایک خط کھینچ پر مومنوں کو اسکے اندر رکھ لیا۔ ہوا نے بہت زور کیا مگر جو مومن تھے انکا ذرہ برابر

بھی اس ہوا سے کچھ نہ بگڑا اور وہ صحیح سلامت رہے سچ کہا ہے ” من کان للہ کان اللہ لہ” ترجمہ: جو شخص اللہ کا ہو جاتا ہے تو پھر اللہ بھی اسکا ساتھی ہو جاتا ہے۔ بعد میں حضرت ہود علیہ السلام مومنوں کو اپنے ساتھ لیکر “جرہم” کے پاس گئے اور کہا کہ کیا تو نے عذابِ الٰہی دیکھا؟ اس نے کہا ہاں، تب حضرت ہود علیہ السلام نے فرمایا کہ کہہ ” لا الہ الا اللہ ھود رسول اللہ” وہ ملعون بولا کہ جب تک تو اس قوم کو زندہ نہ کرے گا میں تجھ پر ایمان نہ لاؤں گا اور وہ مردود یہ کہہ ہی رہا تھا کہ اسی وقت اس قدم کے نیچے ہوا نے اس زور کا تھپڑ دیا اور سخت عذاب نے آ کے اسکی ساری قوم کو ہلاک کر دیا۔پس اسکے بعد حضرت ہود علیہ السلام تقریبا” چار سو سال تک زندہ رہے اور اسکے بعد دنیاۓ فانی سے رحلت فرمائی ان کے اس دنیا سے چلے جانے پر مومنین حضرات نے نہایت احترام سے حضرت ہود علیہ السلام کو دفن کیا کافی عرصہ تک روتے رہے ایک روایت میں ہے کہ حضرت ہود علیہ السلام کے انتقال کے بعد انکے ماننے والے مومنین ایک سو سال تک زندہ رہے بعد میں وہ لوگ بھی انتقال کر گئے اور انکی اولاد بھی ایک عرصہ دراز تک اپنے آبائی دین پر قائم رہی، ایک کثیر آبادی سے وہ لوگ آباد ہوۓ اور دین و دنیا کی راہ مخلوق کو بتاتے رہے۔ایک روز شیطان مردود انکے پاس آیا اور لوگوں سے پوچھا کہ تم لوگ کسکو پوجتے ہو؟ انہوں نے کہا زمین و آسماں کے خدا کو پوجتے ہیں ابلیس لعین نے کہا کہ کیا تم خدا کو دیکھتے ہو ؟ انہوں نے کہا کہ نہیں!!! یہ سن کر شیطان نے ان سے کہا کہ تم اس

پتھر سے ایک بت بنا کر پوجا کرو تاکہ وہ روزِ قیامت تمہارے لئے شفیع ہووے ان لوگوں نے ابلیس کی باتوں کا یقین کر کے پتھر کا ایک بت بنا کر میدان میں رکھ دیا جیسا کہ خدا تعالٰی نے فرمایا: “وثمود الذین جابو االصخر بالواد” ترجمہ: اور کیسا کیا تیرے رب نے قوم ثمود سے جنہوں نے تراشے پتھر۔ یعنی بت بنانے کے لئے اور انکو وادی میں رکھ دیا، وادی میدان انکے مکان کا نام ہے اور ان لوگوں نے پہاڑوں کو کھود کر اپنے رہنے کیلئے گھر بناۓ تھے اور اسی پتھر سے اپنے پوجنے کے لئے بت بھی تراشے تھے اور اس بت کے چاروں طرف چھید کر کے اسمیں نقرہ پلا دیا تھا اور ایک تخت عظیم الشان بچھا کر اس پر ایک سونے کی کرسی رکھ کر اس بت کو رکھ دیا تھا بعد میں ابلیس نے کہا کہ تم سب اسکو سجدہ کرو اور اسکے کہنے سے سب نے سجدہ کیا اور وہ کافر ہو گئے، اسی جگہ ایک گنبد عظیم الشان بنا کر اسے معبد خانہ قرار دیا ” نعوذ باللہ منھا بعدہ” خداۓ تعالٰی نے ایک مچھر کو بھیجا اس نے اس گنبد کو چھید کر کے بت کے اندر جا کر خرطوم اپنا اسکے سر میں چبھو کر اسکو اٹھا لیا اور دریاۓ محیط میں ڈال دیا۔ تمام کافر یہ حال دیکھ کر بہت متحیر اور پریشان ہوۓ اور کہنے لگے کہ اب ہم کس کو پوجیں گے۔ یعنی جہالت میں لوٹ گئے۔بعد میں اللہ پاک نے اسی قوم کیطرف حضرت صالح علیہ السلام کو بھیجا لیکن “شداد لعین” حضرت ہود علیہ السلام کے زمانے میں تھا اسلئے حضرت صالح علیہ السلام سے پہلے “شداد لعین” کا قصہ تحریر کیا جاۓ گا۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


تازہ ترین خبریں
چلو بات چیت کرتے ہیں ۔۔مولانا فضل الرحمان کس سے مذاکرات کیلئے راضی ہو گئی ۔۔ کارکنوں کیلئے بڑادھچکا
’”وہ زلف کی گھنی چھاؤں، وہ آنچل کا لہرانا، پھر تھوڑا سا مسکا کے اور آنکھ کا چرانا، کچھ کرنے کو من کرتا ہے” ‘ علی محمد خان کی اسمبلی میں عائشہ رجب کیلئے شاعری
پائی پائی کامحتاج ۔۔ جیکی شیروف مالی بحران کا شکار ہو گئے۔وجہ کیا بنی ؟مداح ہکا بکا رہ گئے
لاہور میں شدید بارش ،نظام زندگی بری طرح متاثر، کون کون سے علاقے متاثر ہو ئے ؟جانیے
کرپشن کی تمام حدیں پار۔۔ وفاق سے پیسہ لے کر سندھ حکومت کون سے ملک منتقل کرتی ہے؟ ایسادعویٰ کہ پاکستانیوں کے ہوش اڑجائیںگے
پاکستان میں آندھی طوفان نے تباہی مچادی، چھتیں گرنے سے بڑی تعداد میں ہلاکتیں،متعددزخمی، افسوسناک خبر

خصوصی فیچرز
”پہاڑ جیسا قرض 3دن میں ختم ، انتہائی طاقتور وظیفہ“ مقروض افراد کو ایک بار ضرور یہ پڑھنا چاہیے
اس حرکت کے بعدتم دونوں کا نکاح ٹوٹ گیا ہےاب تم دونوں میاں بیوی بن کر نہیں رہ سکتےنوجوان مسلمان جوڑے کا گھر کس وجہ سے برباد ہوگیا
بارات کے ساتھ ہاتھی بھی آئے مگر دولہا بھاگ گیا ۔۔ جانیں شادی میں ایسا کیا واقعہ پیش آیا ؟
کمیٹی ڈالنا کیوں حرام ہے۔۔ علما نے فتویٰ دیا۔۔۔کمیٹی ڈالنےوالوں کے ہوش اڑا دینےوالی خبر
ایک بزرگ چائے کے ہوٹل والے سے سونے کےلئے جگہ مانگ رہے تھے، کہ ایک شخص انھیں عمران خان کے ڈیرے پر لے گیاوہاں ان بابا جی کے ساتھ کیا ہوا، حیران کردینے والی تحریر
خدا کی جانب کبھی پشت مت کرناامام احمد بن حنبلؒ کہتے ہیں: ایک بار راہ چلتے ہوئے میں نے دیکھا، ایک ڈاکو لوگوں کو لوٹ رہا ہے۔ کچھ دنوں بعد مجھے وہی شخص مسجد میں نماز پڑھتا نظر آیا۔ میں اس کے پاس گیا اور اسے سمجھایا کہ تمہاری یہ کیا نماز ہے۔ خدا کے ساتھ معاملہ یوں نہیں کیا جاتا کہ ایک طرف تم لوگوں کو لوٹو اور۔۔۔۔

Copyright © 2020 Pakistan News Network. All Rights Reserved