گھر سے نکال دیا تھا، سڑک میں رہتی تھیں ۔۔ 207 بیٹیاں اور 36 بیٹوں والی وہ خاتون جن کے انتقال پر پورا ملک رو گیا

سوشل میڈیا پر

JS SYNC (NO ADBLOCK BYPASS)

منفرد اور دلچسپ معلومات تو بہت ہیں لیکن کچھ ایسے لوگوں کی معلومات بھی موجود ہیںجو کہ سب کی توجہ حاصل کر لیتی ہیں۔ اس خبر میں آپ کو ایک ایسی ہی خاتون کے بارے میں بتائیں گے جس نے بے انتہا تکالیف سہی مگر یتیم بچوں کی ماں بن کر انہیں پالا۔بھارت سے تعلق رکھنے والی سندھو تائی مہاراشٹرا کے وردا ضلع میں پیدا

ہوئیں، والد کی خواہش تھی کہ بیٹی کو تعلیم ملے مگر والدہ اس بات کے حق میں نہ تھیں، اور پھر 10 سال کی عمر میں سندھو تائی کی شادی اپنے سے 20 بڑے شخص سے ہو گئی۔10 سال کی عمر میں ہونے والی شادی میں سختیاں اور مشکلات تو بہت تھیں مگر سندھو تائی ہر مشکل کا سامنا ہمت اور بہادری سے کرنے کی ٹھان لی تھی۔لیکن

مشکلات یہاں بھی کم نہ ہوئیں اور سندھ تائی 20 سال کی عمر میں جب حاملہ تھیں تو گھریلو تشدد کا شکار ہوئیں اور صورتحال اس حد تک خراب ہو گئی کہ شوہر نے حاملہ بیوی کو گھر سے نکال دیا۔ اس حد تک مشکلات کا شکار ہوئیں کہ سندھو تائی نے نومولود بچی کو جنم بھی سڑک پر دیا، سندھو تائی کی مشکلات یہاں بھی ختم نہیں ہوئیں۔

اس بات کا ڈر اور خوف بھی تھا کہ رات کے اندھیرے میں انسانی درندے انہیں نقصان نہ پہنچائیں۔ اس وجہ سے انہوں نے قبرستانوں کا رخ بھی کیا، یہاں تک کے انہیں لوگ چڑیل بھی تصور کرنے لگے اور ان سے ڈرنے لگے۔لیکن ان کی ہمت اور جواں مردی تھی کہ سب کچھ سہن کیا، اور پھر اس بات کو بھی سوچا کہ یتیم اور

بے گھر بچے کس مشکل کے ساتھ رہتے ہوں گے۔بس اسی خیال کے بعد انہوں نے سوچ لیا کہ ایک یتیم خانہ ضرور کھولنا ہے جہاں وہ یتیم بچوں کو ماں کا پیار دیں، اور وہ یہ سب نہ سہن کر سکیں جو میں نے سہن کیا۔اسی دوران انہیں ریلورۓ ٹریک پر ایک نومولود بچہ پڑا دکھائی دیا، جسے وہ اپنے ساتھ لے آئیں۔ پہلے بچے کے بعد

انہوں نے مزید 16 بچوں کو گود لے لیا اور ان کی تربیت کی۔ اسی طرح انہوں نے پہلا یتیم خانہ بھی کھولا لیکن لوگ پیسے جب دیتے تو رسید بھی مانگتے تو سندھو تائی نے باقاعدہ اس ادارے کو این جی او میں تبدیل کر دیا۔ایک اندازے کے مطابق سندھو تائی نے 42 سال میں 1200 بچوں کو پالا، یہاں تک کے 70 برس کی عمر میں بھی یتیم

بچوں کی پرورش خود کر رہی تھیں، ان کے شوہر نے جب ان سے معافی مانگی تو انہوں نے بنا کوئی شکوہ کیے شوہر کو معاف کر دیا، جس نے شوہر کو بھی جذباتی کر دیا۔سندھو تائی کے کُل 207 داماد تھے یعنی 207 بیٹیاں اور 36 بیٹے جن کی اپنی بیویاں بھی تھیں، اور ان کے پواتے پوتیاں اور نواسے نواسیوں کی تعداد 1050 تھی۔ سندھو تائی کی اپنی

بیٹی بھی وکیل ہیں جو کہ سماجی کارکن کے طور پر کام کر ہی ہیں اور والدہ کے نقش قدم پر ہیں۔سندھو تائی کا انتقال جنوری 2022 میں دل کا دورہ پڑنے سے ہوا تھا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں